پٹھوں میں درد ہوتا ہے

فاطمہ نے لکھا ہے کہ حکیم صاحب! مجھے پٹھوں میں کھچاؤاور در در رہتا ہے۔ کمر در داور پورے جسم کے پٹھوں میں درد کی کیفیت ہروقت رہتی ہے بعض اوقات گردن اور کندھوں کے اعصاب میں بھی شدید درد محسوس کرتی ہوں ۔ آپ سے گزارش ہے کہ کوئی ایسا گھریلو علاج بتائیں کہ مجھے اس درد سے چھٹکارا مل جائے۔

مشورہ:۔ پٹھوں میں درد اور کھچاؤ پیدا ہونے کی ایک بڑی وجہ اعصابی کمزوری ہوا کرتی ہے۔ لیکن اعصابی کمزوری بالخصوص گردن اور کندھوں کے اعصاب میں اکڑ او، تناؤ اور کھچاؤ کا سبب مستقل ہائی بلڈ پریشر بھی بنتا ہے۔ عام جسمانی کمزوری بھی کمر درد اور دیگر پٹھوں میں دردوں کا باعث ہوا کرتا ہے۔ آپ نے سوائے در د کے کوئی اور علامت، کیفیت اور مدت نہیں لکھی۔ ہماری اپنے تمام قارئین سے التماس ہے کہ آپ اس نے کو مزید موثر مفید اور معلوماتی بنانے میں ہماری مدد کریں۔ اپنے مسائل خط پہ لکھیں یا ای میل کے ذریے ، اپنا پورا نام،شہر کا نام ۔ مرض کے حملہ آور ہونے کی مدت استعمال کی جانے والی ادویات کے نام اور مرتب ہونے والے اثرات، اپنی غذائی عادات اور چند بڑی بڑی علامات ضرور لکھا کریں ۔ اگر کسی معالج نے ٹیسٹ وغیرہ کروانے ہوں تو ان کو بھی ساتھ لف کر دیا کریں ۔ اس طرح سے مجھے آپ کے مرض کو سمجھنے میں آسانی ہوگی۔ جب مرض معالج کی سمجھ میں آ جاتا ہے تب ہی وہ اپنے مریضوں کو اس کے چنگل سے چھٹکارا دلا نے کی کوئی سبیل پیدا کرنے کے قابل ہوتا ہے۔ آپ سب سے پہلے اپنا بلڈ پریشر چیک کروائیں اور کسی سمجھدار معالج کے مشورے کے مطابق دوا کا فوری استعمال شروع کردیں فوری افا قہ کے لیے میجک آئل کا ہلکا مساج کر کے گرم کپڑے سے ڈھانپ دیں اور ایک گھنٹے تک اعصاب کو ہوا نہ لگنے دیں۔ اپنی خوراک میں متوازن اجزاء شامل کریں۔ اگر بلڈ پریشر ہائی ہوتو نمک، گوشت، انڈا، چکنائیاں مٹھائیاں بیکری مصنوعات اور کولا مصنوعات سے پرہیز کریں۔ اور اگر جسمانی کمزوری کی وجہ سے اعصابی در دیں اور کمر درد ہوتا ہے تو اپنی غذا میں توانائی سے بھر پور اجزاء شامل کریں۔ چھوٹے گوشت کا قیمہ ادرک اور کالی مرچ ڈال کر، چھوٹے جانوروں کے پائے مغز بادام کھجور، پھل پھلوں کا رس اور دیگر لحمیات ونشاستہ دار غذائی اجزا کو روز مرہ خوراک میں لازمی شامل کریں۔ چاول، بیگن ، دال ماش ، آلواروی شملہ گھیا اور گوبھی جیسی با دی غذاؤں کو اپنی خوراک سے دور کر دیں۔ دودھ میں بھی زیرہ یا سونف کے چند دانے ابال کر استعمال کریں ۔ بغیر میٹھے کے دہی اور لسی بھی استعمال کی جاسکتی ہیں۔ واضع رہے کہ میٹھا دہی با دی جبکہ ساده یا نمکین دہی بادی کش ہوتا ہے۔ نرم بستر فوم کے گدے اور چارپائی پر لیٹنے سے گریز کریں۔ ہارڈ بیڈ تخته یافرش پرسونے کی عادت بنائیں۔ اسی طرح کمر درد سے بچنے کے لیے اپنے بیٹھنے کی پوزیشن پرنظرثانی کرتے ہوئے اسے بہتر کریں۔ زیادہ دیر کھڑے ہونے جھک کروزن اٹھانے اور سیڑھیاں وغیرہ پڑھنے سے بچیں۔ انشاء الله آپ کمر در داور اعصابی دردوں سے محفوظ ہو جائیں گئے۔

اپنے بارےمیں حکیم نیاز احمد ڈیال

Check Also

عمر سے بڑی لگئی ہوں

کوئٹہ سے ثانیہ ہی ہیں کہ میری عمر 31 سال ہے اور میرا پیٹ بہت …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے