مرکزی صفحہ / کرنٹ افئیر / جوڑوں کے درد میں مبتلا ہوں

جوڑوں کے درد میں مبتلا ہوں

۔میری کمر میں شدید در در ہوتا ہے اور اٹھنے بیٹھنے میں بھی بہت تکلیف کا سامنا ہے۔ اس مرض کی وجہ سے اب میں کسی بھی قسم کا کوئی گھر یلو کام کاج بھی نہیں کرسکتی ہوں۔ برائے کرم اس مرض سے نجات پانے کا کوئی آسان سا گھریلوعلاج بتادیں۔ مشورہ:۔
کمر اور جوڑوں میں درد کی ایک بڑی وجہ یورک ایسڈ کی زیادتی سمجھی جاتی ہے جبکہ کمر میں مسلسل رہنے والے درد کا ایک سبب مہروں کی خرابی بھی بنا کر تی ہے۔ علاوہ ازیں جسمانی کمزوری اورقوت مدافعت میں کمی واقع ہونے سے بھی کمر درد اور دوسرے جسمانی اعضاء میں در دکی کیفیت پیدا ہونا معمول کی بات ہے۔ کیلیشیم اور وٹامن ڈی کی کی لاحق ہونے سے بھی ہڈیوں، جوڑوں اور اعصاب میں درد ہونا لازمی بات ہے۔ آپ نے اپنی بیماری کے حوالے سے کوئی واضح صورت حال بیان نہیں کی جس وجہ سے آپ کے مرض کے اسباب کا خاطر خواہ پتہ نہیں چلایا جا سکتا۔ سب سے پہلے تو آپ کسی کنسرن معالج سے مل کر مشورہ کریں ، ان کی ہدایات کے مطابق ٹیسٹ وغیرہ کروائیں مرض کی تشخیص کے بعد تجویز کردہ ادویات کا استعمال شروع کریں۔ بطور گھریلو تدابیر کے کمر اور جوڑوں کے درد سے فوری افاقہ کے لیے میجک آئل کا مساج کریں اور مساج کے بعد متاثرہ مقام کو ایک گھنٹے تک ہوانہ لگنے دیں، بہتر یہی ہے کہ مساج کے بعد بند جگہ میں ٹھہرا جائے یا گرم کپڑے سے ڈھانپ لیا جائے۔ جسمانی اور جوڑوں کے درد سے نجات کے لیے میجیک سفوف سنا کی آدھی چمچی دن میں دو بارکھانے کے بعد کھانا شروع کریں۔ وٹامن ڈی اور کیلشیم کی کمی دور کرنے کے لیے ایسی غذائیں بکثرت استعمال کریں جن میں ان اجزاء کی وافر مقدار پائی جاتی ہو۔ مچھلی
مشر ومز، انڈا، پالک، دودھ، جاپانی پھل ، سیب، آلو، کیلا مغز بادام ، دیسی گھی ، ادرک لہسن، پیاز اور ٹماٹر وغیرہ وٹامن ڈی کیلشیم اور فولاد کی کمی دور کرنے کے قدرتی ذرائع ہیں لیکن دھیان رہے یورک ایسڈ کی زیادتی کی صورت میں ان کا استعمال اپنے معالج کے مشورے سے کریں۔ اسی طرح دیسی گھی کی مخصوص مقدار کھانے کے ساتھ ساتھ اس سے ہڈیوں پر مالش کر کے دھوپ میں بیٹھا جائے کیونکہ یہ سورج کی شعاعوں سے وٹامن ڈی اخذ کر کے ہڈیوں میں جذب کرنے کا آسان، بہترین اور قدرتی طریقہ ہے۔

اپنے بارےمیں حکیم نیاز احمد ڈیال

Check Also

انتڑیوں کی سوزش سے کیسے بچیں?

تن آسان زندگی بہت سے بدنی مسائل کو جنم دیتی ہے۔ فی زمانہ بہت سارے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے